ترجیح بین الاحادیث میں امام شافعی اور طحاوی کے مناہج کاتقابلی جائزہ

ترجیح بین الاحادیث میں امام شافعی اور طحاوی کے مناہج کاتقابلی جائزہComparative Analysis of al-Shāfiʿī and al-Tahawī’s Approaches towards Giving Preference to Resolve Contradiction in Ḥadīths

  • Dr. Muhammad Waris Ali Lahore Garrison University, DHA phase VI Lahore
Keywords: Islam, Ḥadīth, Contradiction, al-Shāfaʿī, al-Ṭaḥāwī, Preference

Abstract

This article focusses the approaches of two early Muslim theologians al-Shāfiʿī(d204/820) and al-Ṭaḥāwī(d321/933) regarding principle of preference in solving Contradictory Ḥadīth. The examples from their books Ikhtilāf-al-Ḥadīth and Sharaḥ M’āni al-Athār, have been taken, discussed and analysed. Both the scholars have discussed and solved many issues by giving preference to one Ḥadīth on the other. They differed on some issues with each other for example al-Shāfiʿī has given preference to the Ḥadīths in which the Prophet Muhammad raised his hands in prayer but al-Ṭaḥāwī resolved the contradiction with abrogation. Similarly, they differed about the matter of passing in front of the man who is saying prayer and resolved the contradiction with the help of preference and abrogation respectively. But they agreed on the issue of prayer at the time of eclipse and the matter of the fast in case of impurity.

References

۔ مجدد الدین فیروز آبادی ، "القاموس المحیط" ،مؤسسۃ الرسالۃ،1426، 1/ 221 ۔ مجدد الدین محمد بن یعقوب فیروز آبادی ، "القاموس المحیط" ،مؤسسۃ الرسالۃ،1426ھ، 1/ 221

Mujīd al-Dīn Muḥammad ibn Ya'qūb, al-Fayrūzabādī , Al-Qāmūs al-Muḥiṭ, Mu’assisah al-Risālah, 1426H,

۔ ابن منظور افریقی ، " لسان العرب" ،دار صادر، بیروت، س ن، 2/ 445

Ibn Manẓūr al-Afrīqī, Lisān al-ʿArab, Dār e Ṣādir, Beirūt, V. II, P. 445

۔ حدیث کا متن یہ ہےحدَّثني سويدُ بن قيسِ، قال: جَلَبتُ أنا ومَخْرَفَةُ العبْديُّ بَزّاً من هَجَر، فأتينا به مكَّة، فجاءَنا رسولُ الله - صلَّى الله عليه وسلم - يمشي، فساومَنا بسراويلَ، فبعناه، وثمَّ رجلٌ يزِنُ بالأجْر، فقال له رسولُ الله - صلَّى الله عليه وسلم: "زِنء وأَرْجِحْ" سنن أبي داود ،تحقیق الأرنؤوط باب في الرجحان في الوزن، والوزن بالأجر،5/ 225

۔ آمدی،سیف الدین "الاحکام فی اصول الاحکام" ، المکتب الاسلامی ،بیروت،ت ن،4/ 460

Āmdī, Sayf al-Dīn, Al-Aḥkām fi Uṣūl al-aḥkām, al-Maktab al-Islamī, Beirūt, V. 4, P 460

۔ محمد بن علی شوکانی، "ارشاد الفحول"، مطبعۃ السعادۃ،مصر ،الطبعۃ الاولی،۱۳۲۷ھ ،ص 241

Muḥammad ibn Ali al-Shawkānī, Irshād al-Fuḥool, Maṭba’ah al-Sa’ādah, Egypt,1327H, P.241

۔ ان کا پورا نام مسعودبن عمر بن عبد اللہ سعدالدین تفتازانی ہے آپ تفتازان میں 711ھ کو پیدا ہوئے اور سمرقند میں 793ھ کو وفات پائی ان کی اہم تالیفات میں التلویح علی التوضیح ہے۔شذرات الذھب،8/547

۔ سعد الدین تفتازانی، مسعودبن عمر "التلویح " ، دارالکتب العلمیہ ، بیروت ، ت ن، 2/ 103

Sa'ad al-Din Mas’ūd ibn Umar al-Taftazānī, at-Talwiḥ, Dar-al-Kutub-aI-lmiyyah, Beirūt,V. II, P. 103

۔ الجرجانی ،علی بن محمد ،"معجم التعریفات"تحقیق محمد صدیق منشاوی،دار الفضیلہ،قاہرہ ، ت ن ، ص 51

Al-Jurjānī, Ali ibn Muhammad, Mu’jam al-Taʿrīfāt, Dār al-Faḍhilah, Caro, P. 51

۔ محمود عبد الرحمان عبد المنعم ،"معجم المصطلحات و الالفاظ الفقهیة" ،دار الفضیلہ،قاہرہ ، ت ن ، ص 454

Maḥmūd Abd Reḥmān, Mu’jam al-Muṣṭalehāt wa alfāẓ-al-fiqhiyya, Dār al-Faḍhilah, Caro, P. 454

۔ ان کا پورا ناممحمد بن محمد ، المعروف ابن أمير الحاجہےسن پیدائش 825ھ ہے سن وصال 879ھ ہے ان کی معروف تصانیف میں التقرير والتحبير شرح كتاب التحرير لابن الهمام في أصول الفقه ہےشذرات الذهب ،490/9،الأعلام749/

۔ ابن امیر الحاج ،محمد بن محمد الحلبی " التقریر والتحبیر"،دار الکتب العلمیہ ،بیروت،الطبعۃ الاولی،1419ھ،3/ 17

Ibn Amir al-Ḥaj, Muḥammad ibn Muḥammad al-Ḥalabī, al-Taqrīr wa-Taḥbīr, Beirūt, Dār al-Kutub-al-‘Ilmiyya, 1419 AH, V. 3, P. 17

۔ اعتراضات وجوابات کی تفصیل ملاحظہ کرنے کے لیے دیکھئے الاحکام‘‘ للآمدی4/462،التعارض والترجیح للبرزنجی1/80،التعارض والترجیح للحفناوی، ص 279

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث "،باب فی المروربین یدی المصلی، ص 97 ؛بخاری،"الجامع الصحیح"،کتاب الصلاۃ،باب سترۃ الامام سترۃمن خلفہ ،رقم الحدیث 493

Al-Shāfaʿī, Ikhtilāf al-Ḥadīth, 11, bāb fi-al-marūr baina yaday al-Muṣallī, P. 97

Al-Bukhārī, Muḥammad ibn Ismā’il, al-Jāmi’ al-Ṣaḥiḥ, bāb sutrat-al-Imām sutraah man Khalfihī, Ḥadīth. No 493.

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث "،باب فی المروبین یدی المصلی، ص 97

Al-Shāfaʿī, Ikhtilāf al-Hadīth, 11, Bāb fi-al-marūr baina yaday al-Muṣallī, P. 97

۔ الانعام 6: 164

۔ ان کا پورا نام عَبْد اللَّهِ بْن المغفل بن عبدنهم بْنِ عَفِيفِ بْنِ أَسْحَمَ بن ربیعہ بن عدي بن ثعلبہ بن ذؤيب بن سعد بن عدی بن عثمان بن مزينہ ہے اور کنیت ابو زیاد یا ابو سعید ہے یوم حدیبیہ میں بیعت رضوان کرنے والوں میں شامل ہیں مدینہ میں رہتے تھے پھرحضرت عمر رضی اللہ عنہ نے لوگوں کو تعلیم دینے کے لئے انہیں بصرہ بھیج دیا لہذابصرہ منتقل ہو گئے اور وہیں پر وصال ہوا۔مرتے وقت انہوں نے اہل خانہ کو وصیت کی تھی کہ ابن زیاد ان کا جنازہ نہ پڑھائے ان کا وصال امیر معاویہ رضی اللہ عنہ کی خلافت کے آخر میں ہوا۔ الطبقات الكبرى 7/10

۔ طحاوی،"شرح معانی الآثار"، کتاب الصلوۃ، باب المروربین یدی المصلی،رقم الحدیث ،2633

Al-Ṭaḥāwī, M’ānī al-Āthār, Kitāb as-Ṣalah, bāb-al-marūr baina yaday-al-Muṣallī, Ḥadīth. No 2633

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث"، باب صلاۃ کسوف الشمس القمر،ص 136

Al-Shāfaʿī, Ikhtilāf al-Hadīth, bāb Ṣalat kusūf as-shams al-Qamar, P. 136

۔ ان کا پورا نام نفيع بن الحارث بن كلدة بن عَمْرو بن علاج بن أبي سلمة بن عبد العزى بن غير بن عوف بن ثقيف الثقفيہے۔ کہا گیا ہے کہ وہ ابن مسروح ہیں جو الحارث بن كلدة کے غلام تھےاور ان کی والدہ سميہ بھی الحرث بن كلدة کی جاریہ تھیں اور آپ رضی اللہ عنہ یوم طائف میں رسول اللہ کے پاس حاضر ہو کر اسلام لائےاور ابو بکرہ کی کنیت ملی اور آپ ﷺ نے انہیں آزاد کرایا۔ أسد الغابہ فی معرفہ الصحابہ،لعلی بن أبی الكرم محمد بن محمد الجزري، عز الدين ابن الأثيرالمتوفى: 630ھ،دار الكتب العلميہ،الطبعہ: الأولى،1415ھ - 1994 م

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث"، باب صلاۃ کسوف الشمس والقمر، ص 136

Al-Shāfaʿī, Ikhtilāf al-Ḥadīth, bāb Ṣalat kusūf as-shams al-Qamar, P. 136

۔ طحاوی،"شرح معانی الآثار"، کتاب الصلاۃ، باب صلاۃ الکسوف کیف ھو،،رقم الحدیث ،1914

Al-Ṭaḥāwī, M’ānī al-Āthār, Kitāb al-Ṣalat, bāb Ṣalat al-kusūf kaifa huwa, Ḥadīth. No 1914

۔ طحاوی،"شرح معانی الآثار"، کتاب الصلاۃ، باب صلاۃ الکسوف کیف ھو، نسائی نے ان الفاظ سے روایت نقل کی ہے إِذَا خَسَفَتِ الشَّمْسُ وَالْقَمَرُ فَصَلُّوا كَأَحْدَثِ صَلَاةٍ صَلَّيْتُمُوهَا۔ نسائی ،"السنن"،کتاب الکسوف،باب کیف صلاۃ الکسوف

Al-Ṭaḥāwī, M’ānī al-Āthār, Kitāb al-Ṣalat, bāb Ṣalat al-kusūf kaifa huwa

۔ طحاوی،"شرح معانی الآثار"، کتاب الصلاۃ، باب صلاۃ الکسوف کیف ھو، رقم الحدیث ،1915

Al-Ṭaḥāwī, M’ānī al-Āthār, Kitāb al-Ṣalat, bāb Ṣalāt al-kusūf kaifa huwa, Ḥadīth. No 1915

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث"، باب من اصبح جنبا فی رمضان، ص 141 ؛بخاری،"الجامع الصحیح"،کتاب الصوم،باب الصائم یصبح جنبا ،رقم الحدیث ،1926 ؛ابن ماجہ،"السنن"، ابواب الصیام،باب ما جاء فی الرجل یصبح جنباوھو یرید الصیام ،رقم الحدیث ،1702

Al-Shāfiʿī, Ikhtilāf al-Hadīth, bāb man aṣbaḥa junuban fi Ramaḍhān, P. 141

Al-Bukhārī, Muhammad ibn Ismā’īl, al-Jāmi’ al-Ṣaḥiḥ, bāb al-Ṣā’im yaṣbaḥu junuban fi Ramaḍhān, Ḥadīth. No 1926.

Ibn Mājah, al-Sunan, abwab al-Ṣiyām, bab mā jā’a fi ar-rajul yaṣbaḥu junuban wahuwa yurīd as-Ṣiyām, Ḥadīth. No 1702.

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث"، باب من اصبح جنبا فی رمضان، ص 141 ؛بخاری"الجامع الصحیح"،کتاب الصوم،باب الصائم یصبح جنبا،رقم الحدیث ،1926

Al-Shāfaʿī, Ikhtilāf al-Ḥadīth, bāb man aṣbaḥa junuban fi Ramaḍhān, P. 141

Al-Bukhārī, Muhammad ibn Ismā’īl, al-Jāmi’ al-Ṣaḥiḥ, bāb-aṣaim yaṣbaḥu junuban fi Ramaḍhān, Ḥadīth. No 1926.

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث"، باب من اصبح جنبا فی رمضان،ص 141

Al-Shāfiʿī, Ikhtilāf al-Hadīth, bāb man aṣbaḥa junuban fi Ramaḍhān, P. 141

۔ طحاوی،"شرح معانی الآثار"، کتاب الصیام ،باب الرجل یصبح فی یوم من شھر رمضان جنبا ھل یصوم ام لا، 2/106

Al-Ṭaḥāwī, M’ānī al-Āthār, Kitāb al-Ṣiyām, bāb ar-rajul yaṣbaḥu fi yowmin min Shahr Ramaḍhān junuban hal yaṣūm um lā, V. II, P. 106

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث"، باب رفع الایدی فی الصلاۃ، ص 97

Al-Shāfiʿī, Ikhtilāf al-Hadīth, bāb raf’ al-Yadai fi-Ṣalāt, P. 97

۔ ایضا، ص 127

Ibid, P. 127

۔ شافعی،"اختلاف الحدیث"، باب التیمم، ص 65

Al-Shāfiʿī, Ikhtilāf al-Hadīth, bāb al-Tayammum, P. 65

۔ عَنْ عَلِيِّ بْنِ أَبِي طَالِبٍ رَضِيَ اللهُ عَنْهُ، عَنْ رَسُولِ اللهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَنَّهُ كَانَ إِذَا قَامَ إِلَى الصَّلَاةِ الْمَكْتُوبَةِ كَبَّرَ وَرَفَعَ يَدَيْهِ حَذْوَ مَنْكِبَيْهِ، وَيَصْنَعُ مِثْلَ ذَلِكَ إِذَا قَضَى قِرَاءَتَهُ إِذَا أَرَادَ أَنْ يَرْكَعَ، وَيَصْنَعُهُ إِذَا فَرَغَ وَرَفَعَ مِنَ الرُّكُوعِ، وَلَا يَرْفَعُ يَدَيْهِ فِي شَيْءٍ مِنْ صَلَاتِهِ وَهُوَ قَاعِدٌ، وَإِذَا قَامَ ۔۔۔الخ) طحاوی،"شرح معانی الآثار"، کتاب الصلاۃ، باب التکبیر للرکوع ، رقم الحدیث،1336

Al-Ṭaḥāwī, M’ānī al-Āthār, Kitāb as-Ṣalāt, bāb al-takbīr li al-rukū’, Ḥadīth. No 1336

۔ أَنَّ عَلِيًّا رَضِيَ اللهُ عَنْهُ كَانَ يَرْفَعُ يَدَيْهِ فِي أَوَّلِ تَكْبِيرَةٍ مِنَ الصَّلَاةِ، ثُمَّ لَا يَرْفَعُ بَعْدُ ۔طحاوی،"شرح معانی الآثار"، کتاب الصلاۃ، باب التکبیر للرکوع ،رقم الحدیث،1353

Al-Ṭaḥāwī, M’ānī al-Āthār, Kitāb as-Ṣalāt, bāb al-takbīr li al-rukū’, Ḥadīth. No 1353

۔ عَنْ ابْنِ عُمَرَ، قَالَ: رَأَيْتُ رَسُولَ اللَّهِ - صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ - إِذَا افْتَتَحَ الصَّلَاةَ رَفَعَ يَدَيْهِ حَتَّى يُحَاذِيَ بِهِمَا مَنْكِبَيْهِ، وَإِذَا رَكَعَ وَإِذَا رَفَعَ رَأْسَهُ مِنْ الرُّكُوعِ، وَلَا يَرْفَعُ بَيْنَ السَّجْدَتَيْنِ ۔ابن ماجہ،"السنن"،باب اقامۃالصلوات، باب رفع الیدین اذا رکع رقم الحدیث،858

Ibn Mājah, al-Sunan, bāb Iqāmah al-Ṣalawāt, bāb raf’ al-yadayn Izā raka’a, Ḥadīth. No 858.

۔ عَنْ مُجَاهِدٍ، قَالَ: «صَلَّيْتُ خَلْفَ ابْنِ عُمَرَ رَضِيَ اللهُ عَنْهُمَا فَلَمْ يَكُنْ يَرْفَعُ يَدَيْهِ إِلَّا فِي التَّكْبِيرَةِ الْأُولَى مِنَ الصَّلَاة طحاوی،"شرح معانی الآثار"، کتاب الصلاۃ، باب التکبیر للرکوع ۔۔۔ رقم الحدیث،1357

Al-Ṭaḥāwī, M’ānī al-Āthār, Kitāb as-Ṣalāt, bāb al-takbīr li al-Ruku’…, Ḥadīth. No 1357

Published
2021-07-23