امام بخاریؒ کا صحیح بخاری میں مؤطا امام مالک پراعتماد؛ تجزياتى مطالعہ

Reliance of Imām Bukhārī on Al-M’ūaṭa Imam Mālik in Ṣaḥiḥ Bukhārī- Analytical study

  • Dr Abdul Ghaffar Assistant Professor, Islamic Studies,
  • Uzma Abbas Govt. Post-Graduate College for Women, Sheikhupura
Keywords: Imām Mālik, Ḥadīth, M’ūaṭa, Narrations

Abstract

In every period, hadith experts have contributed to the preservation of the Hadith. Imam Malik composed M’ūaṭa to safeguard the hadith, and Imam al-Bukhari afterwards turned to al-Mu'tah for assistance. The research methodology of this paper is an analytical study of the reliance of Imām Bukhārī on Al-M’ūaṭa Imam Mālik in Ṣaḥiḥ Bukhārī. In our article, we came to the conclusion that Imam Bukhari recounted a total of six hundred sixty-eight narrations from Imam Malik in his Sahih, of which six hundred four are scriptural narrations that he took from ten versions of Al- M’ūaṭa. As a result, these narrations make up more than ninety percent of all narrations. Contrasted with in his Sahih, Imam Muslim narrates three hundred eighty-nine narrations from Imam Malik, three hundred twelve of which are scriptural narrations that he has derived from eight of narrations of al M’ūaṭa's. These narrations so account for more than eighty percent of all narrations.

Author Biographies

Dr Abdul Ghaffar, Assistant Professor, Islamic Studies,

HOD, Deptt. of Islamic Studies, University of Okara, Okara

Uzma Abbas, Govt. Post-Graduate College for Women, Sheikhupura

 

Lecturer, Deptt. of Islamic Studies,Govt. Post-Graduate College for Women, Sheikhupura

 

References

۔ أبو الفضل القاضي عياض بن موسى،تَرتیب المَدارِک، دار الكلمة للنشر والتوزيع، بیروت، 2012ء، ج۱،ص۳۳ ،نیز امام الزَّرقَانی ؒ! نے ان سے اپنی ’’المُؤطّا‘‘ کی شرح میں نقل کیا ہے۔ دیکھئے : ج۱،ص۶‘‘ اور کتاب ’’المؤطّاؐ‘‘ کے محقِّق سلَیم الْھِلالی نے انہیں اپنی آٹھ ۸ روایات کے ساتھ ’’المقدر‘‘ میں ترتیب دیاہے ۔ ج۱،ص۱۳۲۔

Abu alfaḍl alqāzi Ayāz bin Mosa, tartyb almadārik, dār alkalmah linashr waltozie, Beirūt

دیکھئے: مُقدَّمۃ‘‘ ڈاکٹر محمّد عبداللہ ولد کریم جو کہ ’’مؤطّأ امام مالک‘‘ بن اَنس ؒ! کی شرح میں لکھی جانے والی کتاب ’’القَبس‘ کی تحقیق میں ہے۔ ج۱،ص۵۸۔

۔ حاجی خلیفہ، مصطفی بن عبداللہ کاتب جلبی،کَشْفُ الظُّنُون، دار الفکر، بیروت، 2007ء۔

Ḥāji Khalifah, Mustafā Bin Abdullah Kātib Jalbi, Kashf Al-Zunun, Dār Al-Fikr, Beirūt

۔ مُسْنَد المؤطَّأ، امام محمد بن اسلم غافقی ؒ ! کی /نیز دیکھئے : السیوطی، تَنْوِیْرُ الْحَوالِک، ج۱،ص۱۰/ اَوْجز المَسَالک، ج۱،ص۳۶۔

Musnad Al-Mu'tah, Imām Muhammad Bin Aslam Ghāfaqī, 1/10

۔ جلال الدين السيوطي عبد الرحمن بن أبي بكر، تَنْوِیرُ الْحَوَالِک، المكتبة التجارية الكبرى ، بیروت، 1445ھ،ج۱ص۱۰/ شیخ عبدالحیّ لکھنوی ؒ ! نے اپنی کتاب ’’التَّعْلِیْقُ الممجَّد عَلٰی مؤطَّأ مُحمَّد‘‘ کے مُقدَّمہ میں ، جبکہ شیخ الشَّنْقیطی ؒ! نے اپنی کتاب ’’دَلِیْلُ السَّالِک إلٰی مؤطَّأ الامَام مَالِک‘‘ میں ’’المؤطَّأ‘‘ کے چودہ۱۴ نُسخے ذکر کئے ہیں۔

Jalāl aldin alsuyut īu abd al rahmān bin 'ab ī bakr, tanw īyr alhawalik, almaktabat altijāriat alkubrā, Beirūt

۔ محمد زكريا الكاندهلوي، أوجز المسالك إلى موطأ مالك، دار القلم، بیروت، 1424ھ، ج۱،ص۳۶۔

Muhamad zakaria alkandiḥlawii, 'ojaz almasālik 'ilaā muatā mālki, dār al qalam, Beirūt

۔ أبو الفضل، عياض موسى، الإلْماع، دار التراث، القاهرة، تونس،1379ھ،ج۱،ص۷۴۔

Abū alfaḍal, eiaz mūsāa, al'ilmā, dār altarātḥ,alqāhra, tunis

۔ یہ ہماری اس ’’بحث‘‘ کا خلاصہ ہے (لِمَاذا روی بَعِصُ التَّابِعِیْنِ وَاَئِمَّۃُ أتْبَاعِ التَّابِعِیْنَ بِصِینَعۃِ العَنعَۃُ ۔(

۔ بَرْنَامج الموسُوْعَۃ الْحَدِیْثِیَّۃ، الاضدَار الثَّالِث مِنْ شرِکۃ، ص۴۳۔ حَرف اور بَرْنَامج المکتبۃ الألفیۃ للسنُّۃ النبَّوِیَّۃِ، الاصْدَار الثَّالِثُ مِنَ التُّرَاثِ۔

Barnāmj almwsuāh al Ḥadithiyah, aladdar al ṭḥalīth men shrika, p43

۔ ان جُملہ دو سو ستاسی ۲۸۷ روایات کی کمپیوٹر میں نشاندہی کی ترتیب کچھ اس طرح سے ہے : پہلی رقم سیَاہ خط (لکیر) کے ساتھ جو کہ ’’صحیح بُخاری‘‘ میں ، شیخ محمّد فؤاد عبدالبَاقی ؒ! کے ترتیب شُدہ أحادیث کے نمبروں کے مطابق روایت کے نمبر کی جانب اشارہ کرتی ہے ۔ جبکہ دوسری رقم سُرخ خط (لکیر) کے ساتھ واضح کی گئی ہے ، جو کہ شیخ محمّد فؤاد عبدالباقی ؒ! کے ہی ترتیب شُدہ نمبروں کے مطابق ’’المؤطّا‘‘ میں روایت کی تخریج کی طرف راہنمائی کرتی ہے۔ روایات کے نمبرز (Numbers) درج ذیل ہیں۔ (۲/۴۷۴)، سے لیکر آخر تک (۷۴۶۳/۹۷۴/۹۹۹/۱۰۱۲) ۔

۔ ان تمام مَذکُورہ روایات کے نمبرز (Numbers) بھی شیخ محمّد فُوّاد عبدالباقی ؒ ! کے ترتیب شُدہ نمبرز کی بُنیاد پر رَقم کئے گئے ہیں۔ جو کہ درج ذیل ہَیں۔ (۴۶/۴۲۵) ......... سے لیکر آخر تک (۷۵۴۸/۱۵۳)

ان مذکُورۃ ایک سو نو ۱۰۹ روایات کے نمبروں (Numbers) کی ترتیب، شیخ محمّد فُؤاد عبدالباقی ؒ! کے ترتیب دئیے ہوئے أحادیث کے نمبروں (Numbers) پر رکھی گئی ہے ۔ جن کی تفصیل درج ذیل ہے۔

(۲۹/۴۴۵)،........ سے لیکر آخر تک (۷۳۳۱/۱۰۲۰/۱۶۳۶)

۔ ان روایات کے نمبرز (Numbers) درج ذَیل ہَیں: (۶۵۴/۱۵۱/۲۹۵)، (۱۱۱۳/۳۰۷) ....... سے لیکر آخر تک (۷۴۸۶/۴۱۳)

۔ ان مذکُورہ پندرہ ۱۵ روایات کے نمبرز (Numbers) حسبِ ذیل ہیں: (۲۰۵۳/۱۴۴۹) .... سے لیکر آخر تک (۷۲۵۳/۱۵۹۹)

۔ ان مَذکورہ آٹھ 8 روایات کے نمبرز (Numbers) درج ذیل ہیں۔ (۱۱۸) ،(۳۲۵۶) ...... سے لیکر آخر تک (۷۳۹۳)

۔ ان مذکُورہ چھ۶ روایات کے نمبروں کی تفصیل حسبِ ذَیل ہے، جو کہ شیخ محمّد فؤاد عبدُ الباقی ؒ! کی دی گئی ترتیب پر اعتماد کرتے ہُوئے رقم کی گئی ہے ۔ (۲۴۳۶/۱۴۸۲)...... سے لیکر آخر تک (۴۹۷۵)

Published
2022-06-29